. . وُہ سُرخ رُو ہُوئے مرے شعروں کو پڑھ کے قیس رِہ رِہ کے چومنے لگیں رُخسار تتلیاں . . .


.
.
وُہ سُرخ رُو ہُوئے مرے شعروں کو پڑھ کے قیس
رِہ رِہ کے چومنے لگیں رُخسار تتلیاں
.
.
.


Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *