کھلے جو عشق کا مکتب تو ’’ لب پہ آتی ‘‘ نہیں

کھلے جو عشق کا مکتب تو ’’ لب پہ آتی ‘‘ نہیں
دُعا میں دِل سے پڑھائیں ، ’’ وُہ اِتنا دِلکش ہے ‘‘

معلمہ بنے ، دو منشی تین ہفتوں تک
تو حاضری ہی لگائیں ، وُہ اِتنا دِلکش ہے

کلاس چھوڑنا تو دُور اُس کے سب شاگرد
بروزِ عید بھی آئیں ، وُہ اِتنا دِلکش ہے

سنیں تو چھٹی کی دَرخواست کے سِوا فَر فَر
سب اُس کے طلبہ؟ سنائیں ، وُہ اِتنا دِلکش ہے

توجہ لینے کو اُس کی شریف بچے کریں
عجیب عجیب خطائیں ، وُہ اِتنا دِلکش ہے

وُہ صرف پاس نہیں اَپنے پاس کرتا ہے
سو بچے جان لڑائیں ، وُہ اِتنا دِلکش ہے

کلاس ہے کہ مریدی کا سلسلہ کوئی
چڑھاوے بچے چڑھائیں ، وُہ اِتنا دِلکش ہے
#شہزادقیس
.

Sign Up