• Slideshow Slideshow Slideshow Slideshow Slideshow Slideshow Slideshow
کُن کی اَذانِ ناز کا جوہر نبیؐ مِرا

کُن کی اَذانِ ناز کا جوہر نبیؐ مِرا

کُن کی اَذانِ ناز کا جوہر نبیؐ مِرا
خِلقت کی ہر بہار کا جھومر نبیؐ مِرا
رَوشن ہے کہکشاؤں میں حُسنِ محمدیؐ
سوچو تو کس قَدَر ہے منور نبیؐ مِرا
رَحمت کرے طواف ، محمدؐ کے نور کا
اَبرِ کرم کا شبنمی محور نبیؐ مِرا
پتھر پہ اِک لکیر ہے شقُ القمر کا باب
کنکر کو جو بنا دے سُخن وَر نبیؐ مِرا
سیدؐ ، کلیمؐ ، اُمیؐ ، محمدؐ ، قویؐ ، خلیلؐ
منصورؐ ، حقؐ ، نذیرؐ ، مطہرؐ نبیؐ مِرا
طہؐ ، بشیرؐ ، عزیزؐ ، رَحیمؐ ، اَبطحیؐ ، منیرؐ
یسؐ ، اَمینؐ ، نورؐ ، مدثرؐ نبیؐ مِرا
نقشِ قدم رَسولؐ کا خوشبوئے دین ہے
نعلین بھی ہے جس کی معطر نبیؐ مِرا
دیکھا طویل سجدے میں دِل کی نگاہ سے
اُمت کی اُلجھنوں پہ ہے مضطر نبیؐ مِرا
اَپنی طرف ترازُو کا جھکنا مُحال تھا
مولا کا شکر ، شافعِ محشر نبیؐ مِرا
تا حشر ، نعت خوانوں نے محنت تو کی مگر
قطرہ ہُوا بیان ، سمندر نبیؐ مِرا
معراج تھی فرشتوں کی حیرانگی کی رات
بے پر بھی اُترا قیس ، فلک پر نبیؐ مِرا
Not yet rated

No Comments

Add a comment:

Code
*Required fields