حیرت سے دَم بخود ہوں ، اِس بار کیا ہُوا کہ

حیرت سے دَم بخود ہوں ، اِس بار کیا ہُوا کہ

حیرت سے دَم بخود ہوں ، اِس بار کیا ہُوا کہ
خط تک نہیں ملا ہے اور عید آ رہی ہے
Built By UrduKit (www.UrduKit.com)
Not yet rated

No Comments

Add a comment:

Code
*Required fields