Page No. 1

Page No. 1

اِس ملک کو گر باپ کی جاگیر کرو گے
تو صورَتِ حالات کو گھمبیر کرو گے
اَولاد شہنشاہی میں بنتی ہے شہنشہ
سلطانی ء جمہور کی تفسیر کرو گے ؟
چاند اور ستارے کے وَطن میں ہے اَندھیرا
اِک ایٹمی طاقت کی یہ تشہیر کرو گے ؟
زِندان سے ایوان میں پہنچے ہُوئے لوگو
تم کس طرح اِس ملک کی تطہیر کرو گے
ایوانوں کی تسخیر تمہیں خیر مبارَک
بحرانوں کو کس دِن بھلا تسخیر کرو گے
ایوان میں بھی سوئے ہُوئے دیکھا ہے اَکثر
تم خاک مرے خواب کی تعبیر کرو گے
ڈِگری بھی نہ لے پائے اَرے ’’ ٹھیک سے ‘‘ جعلی !
سنجیدہ مسائل کی کیا تدبیر کرو گے ؟
حل ہو بھی گئے تم سے جو کچھ جزوی مسائل
دِن رات عنایات کی تشہیر کرو گے
دُنیا سے تو اِک اینٹ بھی لے جا نہیں سکتے
جنت میں مَحَل کس طرح تعمیر کرو گے
لاچاروں کے جب ہاتھ گریبان پہ ہوں گے
اُس وقت بھی کیا مانگ کے تقریر کرو گے ؟
تبدیلی کا آغاز بھی بن سکتی ہے وُہ قیس
حق بات اَگر خون سے تحریر کرو گے
(Built By UrduKit UrduKit.com)
Not yet rated

No Comments

Add a comment:

Code
*Required fields