ہر بات کہاں کہہ سکیں صدمہ تو یہی ہے

ہر بات کہاں کہہ سکیں صدمہ تو یہی ہے

ہر بات کہاں کہہ سکیں صدمہ تو یہی ہے
خود ، خود کو لگا رَکھتے ہیں زَنجیر ، سخنور
شہزاد قیس کی کتاب "اِنقلاب" سے انتخاب
Built By UrduKit (www.UrduKit.com)
Not yet rated

No Comments

Add a comment:

Code
*Required fields