Page No. 1

Page No. 1

عقل جس کی خدا بڑھا دے گا
بات سننے کا حوصلہ دے گا
چند لوگوں کو ، حشر میں غفار !
صبر کے جرم پر سزا دے گا
گر کرم کی اُمید رَکھو گے
حشر میں سائے میں بٹھا دے گا
اُس کا نذرانہ دو گنا ہو گا
پیر گر عربی میں دُعا دے گا
آدمی خود اُدھار سر تا پا !
آدمی ، آدمی کو کیا دے گا
بے حیائی کا یہ کھڑا پانی !
گھر کی بنیاد ہی ہلا دے گا
صاف گوئی نری حماقت ہے
عقل مند کچھ نہ کچھ چھپا دے گا
ساری دُنیا سے جیتنے والے !
تیرا بچہ تجھے ہرا دے گا
آخری زَلزلوں سے کچھ پہلے
ایک دَرویش بد دُعا دے گا
دائرہ آگہی کا چھوٹا رَکھ
علم تجھ کو لہو رُلا دے گا
صُور لے کر فرشتہ اِک دِن قیس
اَمن کی بانسری بجا دے گا
(Built By UrduKit UrduKit.com)
Not yet rated

No Comments

Add a comment:

Code
*Required fields